ملک دشمن جاسوس اور ISI سولجر کا سچا واقعہ

ملک دشمن جاسوس اور ISI سولجر کا سچا واقعہ
جمعرات‬‮ 30 اگست‬‮ 2018 | 19:39
وہ کافی عرصہ سے وہاں رہ رہا تھا لوگ اس ڈاکٹر کی بہت عزت کرتے تھے وہ اکثر اوقات ان کا علاج معالجہ مفت کر دیا کرتا تھا۔ اس کے کلینک کے باہر ایک مخبوط الحواس نوجوان پڑا رہتا تھا جو کبھی کسی سے بات نہیں کرتا تھا بس اپنے آپ میں مگن سر جھکائے کچرے کے ڈھیر کے ساتھ پڑا رہتا۔۔ ڈاکٹر اکثر اوقات رحم کھا کر اسے کچھ نہ کچھ کھانے کو دے دیا کرتا کیونکہ نقد رقم جو بھی اس کو دی جاتی وہ وہیں کچرے میں پھینک دیا کرتا اس سے پتہ چلتا تھا کہ وہ

مست ملنگ ہے۔۔ ڈاکٹر صاحب کے معاملات عجیب تھے وہ لوگوں کے بلاوجہ ٹیسٹ کیا کرتے اور ویکسین گھر گھر جا کر دیا کرتے۔ ایک ٹیم تشکیل دے رکھی تھی جو گھر گھر جا کر یہ سب کرتی تھی۔ فروری کی سرد رات کے 1 بجے پٹرولنگ کرتے سولجر اپنی مٹسوبشی وین ڈرائیور کو کاکول روڈ پر جانے کا کہا ابھی وہ وہاں پہنچے ہی تھے کہ وائرلیس میں سرسراہٹ ہوئی۔۔ آل ویپنز فری۔جس کا مطلب تھا ہوائی گھس پیٹھ ہوئی ہے۔۔ سولجر نے سگنل چیک کیا اور واپس کنفرم کیا۔ الفا گراونڈ ٹو ایگل ون کنفرم دی سگنل۔ دوسری طرف سے کہا گیا۔کنفرم۔۔ اس کے بعد دو ہیلی کاپٹر انتہائی نیچی پرواز کرتے ہوئے اسکے سر کے اوپر سے گزرے۔ اور کچھ دور ایک گھر کے اوپر منڈلانے لگے اس نے اپنے نائٹ وژن لگا کر ہیلی کاپٹر کو دیکھا اور چلایا انگیج وین … اس کے ساتھ پوزیشن لیے بیٹھے سولجرس نے RPG فائر کیا جو سیدھا جا کر ایک ہیلی کی دم پر لگا ہیلی ھوا میں چکر کھاتا زمین پر ڈھیر ہو گیا اور پھر شدید فائرنگ کا تبادلہ ہوا ادھر سولجر نے خود LMG سنبھالی ہوئی تھی جو مسلسل آگ اگل رہی تھی وائرلیس اپریٹر نے بیک اپ بلایا مگر دوسری طرف سے ان کو واپس آنے کا کہا گیا۔۔سولجر حیرت زدہ تھا کہ آخر ہو کیا رہا ہے۔۔ ڈاکٹر صاحب رات کے ایک بجے تیزی سے سامان پیک کر رہے تھے شاید کہیں جانے کی بہت جلدی تھی وہ اپنا بیگ اٹھائے گھر سے نکلے تو وہ ملنگ پاگل ان کے سامنے آن کھڑا ہوا۔ ڈاکٹر صاحب نے غصے میں اس کو دھکا دیا اور اپنے پرس سے سارے پیسے نکال کر اس کے آگے پھینک دیے۔۔ وہ سرد لہجے میں بولا اپنے پیسے اٹھا لے۔ ڈاکٹر حیران رہ گیا کہ یہ تو بولتا ہی نہیں تھا اب کیسے بولا؟ مگر اس کے ہاتھ میں پستول دیکھ کر ڈاکٹر سن ہو گیا۔ دل تو کر رھا ہے تمھارا بھیجا اڑا دوں مگر فرض کے ہاتھوں مجبور ہوں۔یو آر انڈر اریسٹ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *