پھیکا تربوز قسمت والوں کو ملتا ہے

پھیکا تربوز قسمت والوں کو ملتا ہے
جمعہ‬‮ 31 اگست‬‮ 2018 | 14:39
آج سے تین سال قبل آپ کسی بھی ریڑھی والے یا دکاندار سے تربوز کا تقاضا کرتے تھے تو وہ چیک کروا کردینے کے نرخ چند روپے فی کلو زیادہ ہی بتاتا تھا۔ نیز تربوز چیک کروانے کے لئے وہ کافی چھان پھٹک کے بعد تربوز منتخب کرتا اور پھر اس پر چھری پھیرتا تھا۔ کچا پھیکا تربوز نکل آنا نارمل بات تھی لیکن گزشتہ تین برسوں سے ایسا نہیں ہورہا۔ آپ سرخ تربوز کی فرمائش کریں وہ اطمینان سے کوئی بھی تربوز کٹ لگا کر آپ کو پیش کردیتا ہے جو سو فیصد سرخ ہی نکلتا ہے۔ ایسا کیوں؟کیمکل کی دکان سے

کی دکان سے ایک مضر رساں کیمیکل ملتا ہے جسے پانی میں حل کرکے سرنج کے ذریعے تربوز کی جڑ میں انجیکٹ کردیا جاتا ہے ، نتیجتا 48

گھنٹوں کے بعد تربوز سرخی مائل رنگت اختیار کرلیتا ہے۔ مذکورہ کیمیکل اتنا ارزاں ہے کہ آپ سو روپے میں ایک ہزار سے زائد تربوز سرخ بناسکتے ہیں۔ جس طرح کسی زمانے میں سرخ تربوز نصیب والوں کا نکلتا تھا اب پھیکا تربوز قسمت والوں کو ملتا ہے۔دن کی بہترین پوسٹ پڑھنے کے لئے لائف ٹپس فیس بک پیج پر میسج بٹن پر کلک کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *