ان قبروں پر انسانوں کیساتھ دیگر مخلوقات بھی فاتحہ خوانی کیلئے آتی ہیں،یہ قبریں قیام پاکستان کے کن ہیروز کی ہیں ؟پڑھیے ایمان افروز رپورٹ

ان قبروں پر انسانوں کیساتھ دیگر مخلوقات بھی فاتحہ خوانی کیلئے آتی ہیں،یہ قبریں قیام پاکستان کے کن ہیروز کی ہیں ؟پڑھیے ایمان افروز رپورٹ
جمعہ‬‮ 20 جولائی‬‮ 2018 | 20:07
کراچی کے قبرستان میں موجود قائداعظم محمد علی جناحؒ کے قریبی ساتھیوں کی قبروں سے خوشبو کے معطر جھونکے آتے محسوس ہوتے ہیں جیسے احاطے کے اندر گلاب کے تازہ پھول مہک رہے ہوں، مؤقر قومی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق کراچی کے علاقے پاپوس نگر قبرستان میں واقعہ ایک احاطے میں موجود قائداعظم؎محمد علی جناحؒ کے تحریک پاکستان کے ساتھیوں کی قبروں سے خوشبو کے جھونکے آتے محسوس ہوتے ہیں جیسے احاطے کے اندر گلاب کے تازہ پھول مہک رہے ہوں۔ احاطے کی دیوار پر سنگ مر مر کی تختی پر ’’قائداعظم محمد جناحؒ کے تحریکی ساتھی اکابرین

ہے۔ان قبور میں حضرت مولانا شبیر علی تھانویؒ، حضرت مولانا شاہ عبدالغنی اور مولانا الحاج ظفر احمد العثمانی التھانویؒ کی قبریں شامل ہیں۔رپورٹ کے مطابققبرستان کے باہر پھول بیچنے والے ایک شخص عبدالواحد کے بقول عبدالواحد کے بقول اس احاطے کے اندر دو قبریں اور بھی ہیں جن میں ایک مفتی رشید احمد صاحب اور دوسری قاضی نیاز الحسن خطیب المعروف ڈاکٹر صدیق کی قبریں ہیں۔ اکثر نوٹ کیا گیا ہے کہ ان قبروں پر دن رات فاتحہ خوانی کیلئے آنے والوں کا تانتا بندھا رہتا ہے ۔ آدھی رات کے اوقات میں بھی ان دیندار شخصیات کی قبروں پر فاتحہ خوانی ہوتی دیکھی گئی ہے۔ لیکن کبھی کسی نے یہ جاننے کی کوشش نہیں کی رات گئے ان قبروں پر فاتحہ خوانی کرنے والے کون لوگ ہیں۔ عبدالواحد کا کہنا تھا کہ اس کا اندازہ ہے کہ ان دیندار لوگوں کی قبروں پر انسانوں کے ساتھ ساتھ دیگر مخلوقات بھی فاتحہ خوانی کیلئے آتی ہیں۔

گھر میں جوتے نہ پیہننے کا حیرت انگیز فائدہ، جاپانیوں کی یہ رسم آپکی صحت کی ضامن ہے جانیے کیسے

گھر میں جوتے نہ پیہننے کا حیرت انگیز فائدہ، جاپانیوں کی یہ رسم آپکی صحت کی ضامن ہے جانیے کیسے
جمعہ‬‮ 20 جولائی‬‮ 2018 | 19:59
جاپانیوں کے رسوم و رواج خاصے دلچسپ ہیں اور ان کے کلچر کی کچھ باتیں تو دنیا کے لیے اچھنبے کی حیثیت رکھتی ہیں، گھر کے اندر جوتے نہ پہننا بھی ایک ایسی ہی بات ہے جسے اب سائنس دانوں نے اسے انسانی صحت کے لیے مفید قرار دیا ہے۔ جاپانی لوگ باہر سے آتے ہیں تو اپنے جوتے گھر کے اندرونی حصے سے باہر ہی رکھتے ہیں۔ گھر کے اندر یا تو ننگے پاؤں چلتے پھرتے ہیں یا ایسے جوتے استعمال کرتے ہیں جو ہمیشہ گھر کے اندر ہی رہتے ہیں۔ سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ جاپانیوں کی

عادت محض روایت کا حصہ نہیں بلکہ بے پناہ طبی فوائد کی حامل بھی ہے کیونکہ باہر استعمال ہونے والے جوتوں کو گھر کے اندر استعمال کرنا طرح طرح کی بیماریوں کا سبب بنتا ہے۔یونیورسٹی آف ایروزونا کے سائنس دانوں نے ایک تحقیق میں معلوم کیا ہے کہ جب ہم باہر سے گھر کے اندر آتے ہیں تو ہمارے جوتوں کے تلووں پر تقریباً 4لاکھ 21ہزار مختلف اقسام کے بیکٹیریا موجود ہوتے ہیں۔ یہ بیکٹیریا تقریباً 96 فیصد جوتوں کے تلووں پر پائے گئے۔ ان میں کلیبسیلا نمونیا جو پیشاب کی نالی کا انفیکشن پیدا کرتا ہے اورسراتیا فکاریا جو سانس کی انفیکشن پید اکرتا ہے اور ای کولی جیسے بیکٹیریا بھی پائے گئے جو نظام انہظام کی بیماریاں پیدا کرتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ بیکٹیریا سڑکوں پر ، ریستورانوں میں، فٹ پاتھ پر، باغیچوں میں، غرض ہر جگہ موجود ہوتے اور ہمارے جوتوں کے ساتھ گھر میں بھی آ جاتے ہیں۔ اس مسئلے کا ایک حل تو یہ ہے کہ آپ اپنے جوتوں کو گھر میں داخل ہونے سے پہلے جراثیم کش محلول کے ساتھ دھوئیں۔ اگر انہیں ویسے ہی اندر لے آئیں تو پھر فرش کو بھی اسی طرح دھوئیں۔یہ ایک مشکل کام ہے لہٰذا اس کا آسان حل یہ ہے کہ باہر استعمال ہونے والے جوتے گھر کے اندرونی حصے میں نہ لائیں۔ گھر کے اندر آپ جاپانیوں کی طرح ننگے پاؤں چل پھر سکتے ہیں یا ایسے جوتے استعمال کرسکتے ہیں جو صرف گھر میں ہی استعمال ہوں اور کبھی بھی باہر نہ لے جائے جائیں۔

قبض سے فوری ریلیف میں مدد دینے والے مشروبات

قبض سے فوری ریلیف میں مدد دینے والے مشروبات
جمعرات‬‮ 19 جولائی‬‮ 2018 | 13:30
قبض کی بیماری کا سامنا اکثر افراد کو ہوتا ہے اور انہیں اپنی زندگی اس کی وجہ سے بہت مشکل محسوس ہونے لگتی ہے۔ ذیابیطس جیسے مرض کی بھی ایک بڑی علامت ہوسکتا ہے۔ تحقیق کے مطابق ذیابیطس سے ہٹ کر کچھ اقسام کے کینسر لاحق ہونے کی صورت میں بھی قبض کی شکایت اکثر رہنے لگتی ہے۔ قبض سے نجات دلانے والے 10 گھریلو نسخے محققین کا کہنا ہے۔ اگر آپ کو اکثر قبض کی شکایت رہتی ہے تو اسے عام سمجھ کر نظر انداز مت کریں۔ تاہم قبض کا علاج تو آپ کے اپنے کچن میں بھی موجود ہے۔

مزیدار مشروبات کا استعمال اس تکلیف سے نجات دلانے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔ موسمبی کا جوس موسمبی کا جوس بھی قبض کو دور کرنے کے لیے اچھا ٹوٹکا ثابت ہوسکتا ہے، اس میں موجود تیزابیت آنتوں میں سے مواد کو نکالنے میں مدد دیتی ہے اور فوری ریلیف ملتا ہے، فوری نتائج کے لیے موسمبی کے جوس میں ایک چٹکی نمک کو شامل کرلیں۔ پائن ایپل جوس پائن ایپل یا انناس کا جوس بھی قبض سے نجات کے لیے بہت موثر ہے کیونکہ یہ جسم کو سیال اور پانی فراہم کرتا ہے جو کہ اس بیماری سے نجات کے لیے ضروری ہے۔ پائن ایپل میں ایک انزائمے ایساموجود ہے جو کہ آنتوں کے افعال کو بہتر بنانے میں بھی مدد دیتا ہے۔ تربوز کا جوس تربوز بھی ایک اچھا آپشن ہے خصوصاً گرمیوں میں، اس میں پانی کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے جس سے جسم میں پانی کی مقدار مناسب رہتی ہے، غذائی نالی صاف ہوتی ہے جبکہ آنتوں کی حرکات ریگولیٹ کرنے میں بھی مدد ملتی ہے۔ خون کی کمی دور کرنے والی غذائیں لیموں پانی لیموں پانی وٹامن سی سے بھرپور ہوتا ہے جو کہ بدہضمی کے علاج میں مدد دیتا ہے، اگر قبض کی شکایت رہتی ہو تو کم از کم 2 گلاس لیموں پانی کا استعمال کریں تاکہ اس بیماری سے نجات میں مدد مل سکے۔ ایپل کا جوس ایپل کا جوس بھی قبض کے خلاف لڑنے میں مددگار ہے جس کا استعمال نظام ہاضمہ کو ریگولیٹ کرنے میں مدد دیتا ہے، اس میں موجود آئرن بھی صحت کے لیے فائدہ مند ہے۔اورنج جوس اورنج جوس بھی وٹامن سی سے بھرپور ہوتا ہے جبکہ اس میں موجود فائبر نظام ہاضمہ کے لیے فائدہ مند ثابت ہوکر قبض سے نجات دلاتا ہے۔ کھیرے کا جوس کھیرے کو کھانا کس کو پسند نہیں ہوگا؟ پانی سے بھرپور یہ سوغات آنتوں کے نظام کو بہتر کرتی ہے، اسی طرح یہ معدے کے لیے ہلکی غذا ہے اور جسم کے لیے قدرتی جلاب جیسا اثر کرتی ہے۔ یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

کلونجی کے حیران کن فوائد ، جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

کلونجی کے حیران کن فوائد ، جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے
بدھ‬‮ 18 جولائی‬‮ 2018 | 18:35
کھانوں کو ذائقہ اور مہک دینے سے ہٹ کر بھی یہ سیاہ بیج متعدد طبی فوائد کے حامل ثابت ہوتے ہیں جس کی وجہ ان میں موجود وٹامنز، امینیو ایسڈز، پروٹینز، فیٹی ایسڈز ، آئرن، پوٹاشیم، کیلشیئم اور متعدد دیگر اجزاء کی موجودگی ہے ،یہاں آپ یہ جان سکتے ہیں کہ روزانہ ان سیاہ دانوں کو کھانا آپ کو کن کن امراض سے بچانے میں مدد دے سکتا ہے۔ بال گرنے سے روکے: کلونجی کا تیل بالوں کے گرنے سے روکنے میں مدد دے کر گنج پن سے بچاتا ہے جبکہ بالوں کی نشوونما بھی تیز کرتا ہے۔ یہ بالوں

کو وہ نمی فراہم کرتا ہے، جس کی اسے ضرورت ہوتی ہے خصوصاً بالوں کی جڑوں کو مضبوط کرتا ہے۔ کچھ مقدار میں کلونجی کے تیل کو گرم کرکے بالوں کی جڑوںمیں اس کی مالش کریں اور پھر ایک گھنٹے بعد سر دھولیں۔ یہ عمل ہفتے میں 2 سے 3 بار دہرائیں۔ قبض سے نجات:قبض ہاضمے کے عام ترین امراض میں سے ایک ہے اور دنیا بھر میں ہر عمر کے افراد اس کا شکار ہوتے ہیں۔ اس مقصد کے لیے کلونجی کے تیل کی کچھ مقدار کو بغیر دودھ کی چائے میں مکس کرکے پی لیں، فوری ریلیف ملے گا۔ یرقان پر قابو پانے میں مدد دے:یرقان کا درست علاج نہ ہو تو یہ جان لیوا مرض ثابت ہوسکتا ہے، تاہم اس ٹوٹکے سے آپ صحت یابی کی رفتار تیز کرسکتے ہیں۔ اجوائن کی کچھ مقدار کو رات بھر پانی میں بھگو کر رکھیں، صبح اسے چھان لیں اور پھر اس میں آدھا چائے کا چمچ کلونجی کا تیل شامل کردیں۔ اس سلوشن کو دن میں ایک دفعل پینا یرقان سے صحت یابی کی رفتار بڑھانے میں مدد دیتا ہے۔ کیل مہاسوں سے نجات:لیموں کے عرق اور کلونجی کے تیل کو مکس کرکے استعمال کرنے سے متعدد جلدی مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے، ایک کپ لیموں کے عرق میں آدھا چائے کا چمچ کلونجی کا تیل ملائیں اور اس مکسچر کو دن میں دو مرتبہ چہرے پر لگائیں اور کیل مہاسوں اور داغ وغیرہ کو جادوئی انداز سے غائب ہوتے دیکھیں۔ کلونجی کا خالص تیل ایڑیاں پھٹنے کے مسئلے سے نجات دلانے کے لیے بھی مددگار ثابت ہوتا ہے۔ ذیابیطس کو دور رکھیں:اگر تو آپ ذیابیطس کے شکار ہیں تو کلونجی کے تیل کے ذریعے اسے کنٹرول میں رکھا جاسکتا ہے، ایک چائے کا چمچ تیل ایک کپ سیاہ چائے میں ملا کر صبح پی لیں اور چند ہفتوں میں آپ نمایاں فرق دیکھ سکیں گے ۔ یاداشت بہتر بنائیں اور دمہ سے بچیں: کلونجی کے بیج پیس کر انہیں شہد کی معمولی مقدار میں شامل کرکے استعمال کرنا یاداشت کو بہتر بناتا ہے، اگر اس مکسچر کو گرم پانی میں ملا کر پیا جائے تو اس سے سانس کے امراض جیسے دمہ وغیرہ سے نجات میں بھی مدد ملتی ہے، مگر یہ عمل کم از کم ڈیڑھ مہینہ دہرانا ہوگا اور اس کے دوران ٹھنڈے مشروبات اور ٹھنڈی تاثیر والی غذاﺅں سے پرہیز کرنا ہوگا۔ سردرد سے نجات:سردرد کا مسئلہ آج کل بہت زیادہ عام ہوچکا ہے تو اس سے بچنے کے لیے کوئی دوا نگلنے سے بہتر ہے کہ اپنی پیشانی پر کلونجی کے تیل سے مالش کرکے آرام کریں، سردرد جلدہی غائب ہوجائے گا۔ جسمانی وزن میں کمی:گرم پانی، شہد اور لیموں کے عرق کے امتزاج میں چٹکی بھر کلونجی کو شامل کرکے مکس کریں اور اسے کچھ عرصے تک روز پینا عادت بنالیں، یہ بہت جلد کئی کلو جسمانی وزن گھٹانے میں مددگار مشروب ثابت ہوگا۔ جوڑوں کے درد میں کمی:کچھ مقدار میں کلونجی کو لیں اور اسے مسٹرڈ آئل کے ساتھ گرم کریں، جب تیل سے دھواں اٹھنے لگے تو چولہا بند کرکے اسے کچھ ٹھنڈا کرلیں، اس کے بعد انگلی کو تیل میں ڈبو کر متاثرہ حصے میں مالش کریں۔ بلڈ پریشر کنٹرول کریں:اگر تو آپ ہائی بلڈ پریشر کے شکار ہیں تو آدھا چائے کا چمچ کلونجی کا تیل گرم پانی میں ملا پر پینا عادت بنالیں، اس سے بلڈ پریشر کو کنٹرول میں لانے میںمدد ملتی ہے۔ گردوں کو تحفظ دیں:گردوں میں پتھری بھی تیزی سے عام ہوتا مسئلہ ہے، اس سے بچنے کے لیے آدھا چائے کا چمچ کلونجی کا تیل دو چائے کے چمچ شہد کے ساتھ گرم پانی میں ملا کر پینا شروع کردیں، اس سے گردے کے درد، پتھری اور انفیکشن سے نجات میں بھی مدد ملے گی، تاہم مناسب غذا کے لیے ڈاکٹر سے ضرور مشورہ لیں۔ دانتوں کو مضبوط بنائیں:دانتوں کے مسوڑے سوج رہے ہیں یا خون نکل رہا ہے، یا دانت کمزور ہوگیا ہے؟ ویسے تو ایسی صورت میں ڈینٹسٹ سے رجوع کیا جانا چاہیے تاہم عارضی طور پر دہی میں کچھ مقدار میں کلونجی کا تیل ملا کر دن میں دو بار ملنا مسوڑوں کو مضبوط بناسکتا ہے۔

ہڈیوں کی کمزوری دور رکھنے میں مددگار غذا

ہڈیوں کی کمزوری دور رکھنے میں مددگار غذا
ہفتہ‬‮ 14 جولائی‬‮ 2018 | 13:53
اپنی ہڈیوں کو ہمیشہ مضبوط رکھنا چاہتے ہیں تو پھلوں، سبزیوں، گریوں، زیتون کے تیل اور مچھلی وغیرہ کو زیادہ کھانا شروع کردیں۔ یہ بات اٹلی میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ بولوگنا یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ پھلوں، سبزیوں، گریوں، زیتون کے تیل اور مچھلی پر مشتمل غذا کو عادت بنالینا عمر بڑھنے سے ہڈیوں میں آنے والی کمزوری سے تحفظ دے سکتا ہے۔ تحقیق میں مزید بتایا گیا کہ یہ غذا امراض قلب، الزائمر اور کینسر جیسے امراض سے بچانے میں بھی مدد دیتی ہے۔ محققین کا کہنا تھا کہ یہ پہلی طویل

تحقیق ہے جس میں بڑھتی عمر میں ہڈیوں کی صحت پر غذا کے اثرات کا جائزہ لیا گیا۔ اس تحقیق کے دوران ایک ہزار سے زائد رضاکاروں کی غذائی عادات کا جائزہ ایک سال سے زیادہ تک لیا گیا۔ محققین نے دریافت کیا کہ ایسے افراد جن کی ہڈیوں کی صحت ٹھیک تھی، ان میں تو اس غذا کے نمایاں اثرات دیکھنے میں نہیں آئے، مگر ہڈیوں کے بھربھرے پن کے شکار افراد کے لیے یہ غذا بہت زیادہ فائدہ مند ثابت ہوئی۔انہوں نے بتایا کہ عام طور پر عمر بڑھنے سے کولہوں کے جوڑ کی ہڈیاں کمزور ہوتی ہیں اور ان کے فریکچر کا خطرہ بڑھتا ہے، تاہم یہ غذا اس حصے کو مضبوط بناتی ہے۔اب محققین اس حوالے سے زیادہ لمبی تحقیق کرنے پر غور کررہے ہیں تاکہ جانا جاسکے کہ یہ غذا کس حد تک ہڈیوں کو مضبوط بنانے میں مدد دے سکتی ہے۔اس تحقیق کے نتائج طبی جریدے امریکن جرنل آف کلینیکل نیوٹریشن میں شائع ہوئے۔

پہلی ملازمت، نوجوان نے ایسا کام کر دیا کہ دھوم مچ گئی کمپنی کے مالک نے پہلے ہی دن تحفے میں نئی گاڑی دیدی

پہلی ملازمت، نوجوان نے ایسا کام کر دیا کہ دھوم مچ گئی کمپنی کے مالک نے پہلے ہی دن تحفے میں نئی گاڑی دیدی
جمعرات‬‮ 19 جولائی‬‮ 2018 | 11:33
ایک امریکی کمپنی کے مالک نے اس ملازم کو اپنی نئی گاڑی تحفے میں دے دی جو ساری رات پیدل چل کر 32 کلومیٹر دور سے نوکری کے پہلے دن کام پر پہنچا تھا۔جب والٹر کار کی اپنی گاڑی خراب ہو گئی تو انھوں نے امریکی ریاست ایلاباما کے شہر برمنگھم کے نواحی علاقے میں واقع ایک گھر پیدل چل کر جانے کا فیصلہ کیا جہاں انھیں سامان منتقل کرنے کے لیے بلایا گیا تھا۔راستے میں ایک پولیس اہلکار والٹر کی ہمت سے اس قدر متاثر ہوا کہ انھیں ناشتہ کروا دیا۔میڈیارپورٹس کے مطابق جب یہ کہانی سوشل میڈیا پر

تو لوگوں نے والٹر کی تعریفوں کے پل باندھ دئیے۔اس کمپنی کی ایک گاہک جیمی لیمی نے فیس بک پر لکھا کہ انھیں اپنے گھر کا سامان منتقل کروانا تھا کہ دروازے کی گھنٹی بجی اور ایک پولیس اہلکار والٹر کار کے ہمراہ وہاں کھڑا تھا۔ پولیس اہلکار نے بتایا کہ والٹر تمام رات چل کر وہاں تک پہنچے تھے کیوں کہ انھیں گھر کے سامان کی منتقلی کا کام کرنا تھا۔لیمی نے لکھا کہ انھوں نے والٹر کو کہا کہ وہ پہلے تھوڑا دم لے لیں لیکن انھوں نے انکار کر دیا اور فوراً کام پر جْٹ گئے۔کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو لوک مارکلن ریاست ٹینیسی سے اپنے اس نئے ملازم کو دیکھنے کے لیے آئے۔والٹرکے ساتھ کافی پینے کے بعد انھوں نے اپنی 2014 ماڈل کی فورڈ ایسکیپ گاڑی ان کے حوالے کر دی۔والٹر نے بتایا کہ یہ میری پہلی نوکری ہے، اور میں انھیں دکھانا چاہتا تھا کہ میرے اندر جذبہ ہے۔ میں سوچا کہ جیسے بھی ہو، میں کام کر دکھاؤں گا۔ پولیس اہلکار نے بتایا کہ والٹر تمام رات چل کر وہاں تک پہنچے تھے کیوں کہ انھیں گھر کے سامان کی منتقلی کا کام کرنا تھا۔لیمی نے لکھا کہ انھوں نے والٹر کو کہا کہ وہ پہلے تھوڑا دم لے لیں لیکن انھوں نے انکار کر دیا اور فوراً کام پر جْٹ گئے۔کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو لوک مارکلن ریاست ٹینیسی سے اپنے اس نئے ملازم کو دیکھنے کے لیے آئے۔والٹر کے ساتھ کافی پینے کے بعد انھوں نے اپنی 2014 ماڈل کی فورڈ ایسکیپ گاڑی ان کے حوالے کر دی۔

کامیاب زندگی کے 6نادر نسخے

کامیاب زندگی کے 6نادر نسخے
پیر‬‮ 2 جولائی‬‮ 2018 | 18:21
خوشگوار اور حسین زندگی ہر انسان کا خواب ہے‘ وہ آگے بڑھنا چاہتا ہے‘ترقی کرنا چاہتا ہے اور آسائشات سے بھرپور حیات گزارنا چاہتا ہے۔ دنیا میں دو طرح کے لوگ ہیں ‘ ایک وہ جوزندگی کے لیے جیتے ہیں ‘ وہ ہر پل بہتر زندگی کے لیے تگ و دو کرتے ہیں اور چھوٹی چھوٹی کامیابیوں کوزندگی کی بڑی خوشی جان کر آگے بڑھتے چلے جاتے ہیں جبکہ دوسری قسم کے لوگ صرف قسمت کو زندگی سمجھ لیتے ہیں یا پھر انہونی کے انتظار میں رہتے ہیں‘ خیالی دنیا کے محل بناتے ہیں‘ فٹ پاتھ پر بیٹھ کر ہوائی

کے خواب دیکھتے ہیں لیکن سچ تو یہ ہے خوبصورت زندگی اتنی آسان نہیں کیونکہ بیچ کو کھلنے اور خوشبو بکھیرنے کی منزل تک پہنچنے کیلئے پہلے مٹی میں غرق ہونا پڑتا ہے اور ہم محنت کے بغیر آسمان کو ہاتھ ڈالناچاہتے ہیں جو ناممکن ہے کیونکہ اللہ تعالیٰ نے زندگی بدلنے کا بڑی حد تک اختیار ہمارے ہاتھ میں بھی دے رکھا ہے‘ ہم تھوڑی سی توجہ‘ تھوڑی سی کوشش سے چند برسوں میں کامیابی کی منزل پا سکتے ہیں لیکن ہمیں کچھ بنیادی چیزوں کو اپنانا ہو گا ۔ ہم چھ ایسی تجاویز آپ کے گوش گزار کرنا چاہتے ہیں جن پر عمل پیرا ہو کر آپ ترقی کا راز پا سکتے ہیں اورآپ بوجھل زندگی کو خوشحال بنا سکتے ہیں۔وقت مٹھی میں باندھ لیں: کہا جاتا ہے وقت جس کے ہاتھ میں ہے زمانے اس کے قدموں میں ہے۔ہم اگر تاریخ انسانی اٹھا کر دیکھیں اور اس میں دنیا کے 100کامیاب ترین انسانوں کی فہرست نکالیں اور ان کی شبانہ روز زندگی کا مطالعہ کریں تو 95فیصد لوگوں میں ایک شے مشترک ہو گی اور وہ ہے وقت کی قدر۔ جو لوگ وقت کا استعمال سیکھ گئے یا جنہوں نے وقت کی اہمیت کو پا لیا وہ کامیابی کے ٹریک پر آ گئے اور رفتہ رفتہ کامیاب انسانوں کی صف میں شامل ہو گئے۔ مثلاََآپ ڈاکٹر اور انجینئر بننا پسند کرتے ہیں مگر حقیقت یہ ہے اس کے لیے وقت صرف کرنا اہم ہے‘ ایک ڈاکٹر یا ایک انجینئر کواس مقام تک پہنچنے کیلئے روزانہ 20, 20گھنٹے مطالعہ کرنا پڑتا ہے اور تب کہیں جا کر وہ ڈاکٹر یا انجینئر بنتا ہے۔ آپ آج سے تہیہ کر لیں وقت کو ضائع نہیں کرنا‘ گھنٹو ں انٹر نیٹ پر بیٹھ کر دوستوں سے فضول گپ شپ نہیں کرنی‘ ٹی وی کے سامنے بیٹھ کر گھنٹوں ڈرامے‘ فلمیں اور کھیلوں سے لطف اندوز نہیں ہونا‘ یہ صرف وقت کا ضیاع ہے۔ فون پر دوستوں‘ عزیز رشتے داروں سے گھنٹوں گفتگو نہیں کرنی‘ چوکوں‘ چوراہوں اور تھڑوں پر دوستوں کے ساتھ مل کر گل چھرے نہیں اڑانے بلکہ اس وقت کو مثبت سرگرمی میں صرف کرنا ہے۔ آپ ارادہ کر لیں آپ یہ وقت کوئی کام سیکھنے‘ مطالعہ کرنے‘ تحقیق کرنے اور کچھ نہ کچھ تخلیق کرنے میں صرف کر یں گے۔ یقین کیجئے آپ کا یہ ارادہ آ پ کو روشنی کی طرف لے جائے گا۔جوہر کی تلاش: کامیاب زندگی کے راستے کی دوسری رکاوٹ جوہر کی عدم تلاش ہے۔ یہ جوہرہے کیا؟ یہ انسان کے اندر چھپی وہ خوبی ہے جس تک رسائی ہر انسا ن کے بس کی بات نہیں۔ اللہ تعالی نے ہر انسان کے اندر کوئی نہ کوئی کمال ضرور رکھا ہے‘ دنیا کا کوئی انسان صفات سے خالی نہیں‘ اسی طرح دنیا کا ہر انسا ن اپنے اندر ایک ایسی خوبی رکھتا ہے اگراسے اس خوبی کا علم ہو جائے‘ وہ اس خوبی کو تلاش کر لے اور پھر اس کو زندگی کا نصیب العین بنالے تو یقین کیجئے وہ کبھی گم نام زندگی نہیں گزار سکتا ۔ مثلاََ ہمارے نوجوان بہترین آرٹسٹ ہوتے ہیں‘ بہترین رائٹر ہوتے ہیں‘ ٹیکنیکل ذہن رکھتے ہیں‘ وہ جانے انجانے میں یہ شوق پورا کرتے رہتے ہیں لیکن جب یہ عملی زندگی میں قدم رکھنا چاہتے ہیں تو پہلے ان کو کوئی راہ سجھائی نہیں دیتی‘ اگر راہ مل بھی جائے تو یہ کسی اور راہ کا انتخاب کر لیتے ہیں لیکن اگر یہ اپنی اس خوبی کو تلاش کر لیں اور اسی کو زندگی کا مقصد بنا لیں تو یہ بہت کم عرصے میں کامیاب ہو سکتے ہیں۔بے کار چیزیں ٹھکانے لگا دیں: ہماری زندگی بکھری پڑی ہوتی ہے‘ ہم بیک وقت گھر میں‘ دفتر میں‘ شاپ پر‘ شہر میں‘ جنرل سٹور پر‘ ہسپتال میں اور شادی بیاہ میں موجود ہوتے ہیں‘ ہم بیٹھے آفس میں ہوتے ہیں لیکن ہمارا دماغ کہیں اور گھوم رہا ہوتا ہے۔جس طرح چیزیں بکھری ہوں تو کمرہ بدنما لگتا ہے بالکل اسی طرح اگر ہماری زندگی مختلف الخیال چیزوں میں الجھی ہوگی تو ہماری زندگی خوبصورت نہیں ہو سکتی ‘ یہ بوجھل اور مصائب کا مجموعہ لگے گی۔ اس کیلئے ضروری یہ ہے آپ سب سے پہلے اپنے دماغ کو خالی کر لیں‘ میں یہ کروں گا‘ میں یہ کر سکتا ہوں‘نہیں میں یہ بھی کر سکتا ہوں‘ نہیں نہیں فلاں نوکری، فلاں کاروبار زیادہ بہتر رہے گا۔ آپ ان خیالات کو چند منٹوں کیلئے ذہن سے جھٹک دیں اور خالی ذہن ہو کر کسی ایک کام پر فوکس کریں۔یاد رکھیں دنیا کا کوئی کام بُرا نہیں ہوتا‘ یہ ہمارے رویے ہوتے ہیں جو ہمیں برا بنا دیتے ہیں۔ آپ چھوٹے سے چھوٹا کام شروع کر لیں لیکن اپنی تمام تر توجہ اس کام پر رکھیں‘ اپنی پوری محنت اور لگن سے کام کریں‘زندگی چندقدم کے فاصلے پر آپ کو مسکراتی ہوئی ملے گی ۔کام اپناکام: ہمارے ہاں ایک رویہ بہت بُرا ہے‘ ہم سمجھتے ہیں ہم جہاں کام کر رہے ہیں وہ ادارے یاکمپنی کے لیے کر رہے ہیں‘ ہمارے دماغوں میں یہ خلل بھی رہتا ہے ہم کام کر کے کمپنی کو فائدہ پہنچا رہے ہیں یا بعض اوقات ایسا بھی ہوتا ہے کمپنی دن بدن ترقی کر رہی ہوتی ہے اور ہم سمجھتے ہیں ہمیں اس ترقی کی بہ نسبت اجرت نہیں ملتی لیکن یہ طرز‘ یہ سوچ انتہائی غلط ہے۔ اصل بات یہ ہے آپ کا کام آپ کی پہچان ہے‘ آپ جس ادارے کیلئے کام کرتے ہیں بنیادی طور پر یہ آپ اپنی ذات کے لیے کر رہے ہوتے ہیں‘آپ اپناکیرئر بنا رہے ہوتے ہیں۔ آپ دوسروں کی کرسی‘ دوسروں کی چھت‘ دوسروں کی بجلی اور دوسروں کی اشیاء استعمال کر کے اپنی زندگی کو سنوار رہے ہوتے ہیں لہٰذا اگر زندگی میں کامیابی عزیز ہے تو آپ کام کو اپنا کام سمجھ کر کریں۔ ہمارا یقین ہے وقت آپ کوکامیاب زندگی کی دہلیز پر لا کھڑا کرے گا۔محنت شاقہ اور اخلاص: محنت کے علاوہ دنیا میں ترقی کا خوبصورت ترین راستہ کوئی نہیں‘ آپ کسی بھی فیلڈ میں ہیں‘ آپ محنت کو زندگی کا جزو بنا لیں‘ اگر آپ 8گھنٹے کام کے بعد بھی کامیاب زندگی سے دور ہیں تو آپ کو 16گھنٹے کام کرنا چاہیے لیکن اس میں ایک احتیاط لازم ہے‘ صحت آپ کی زندگی ہے‘ صحت کے بغیر آپ کچھ بھی نہیں کرسکتے‘ صحت کا خیال رکھیں اور اس کے ساتھ ساتھ جانفشانی سے کام میں جت جائیں‘ دیانت اور اخلاص کو اپنا اصول بنا لیں‘ جو کام بھی کریں کوشش کریں اس میں خلاء نہ ہو‘ کام کو سرسے اتا رنے والے لوگوں کو ‘کام سر سے اتار دیتا ہے۔ آپ محنت سے، شوق سے کام کریں ‘ اس کا صلہ آپ کو خوش گوار زندگی کی صورت میں ملے گا۔وژن یا ٹارگٹ: محنت کے ساتھ وژن یا ٹارگٹ کا ہونا بھی لازم ہے۔ ہم اکثر دیکھتے ہیں لوگ سارا سارا دن کام کرتے ہیں لیکن ترقی نہیں کر پاتے۔مثلاََ مزدور سارا دن بھاری بھر کم کام کرتا ہے‘ کدالیں اور بیلچے چلاتا ہے لیکن شام کو اسے اس محنت کے عوض چار‘ پانچ سو روپے ہی مل پاتے ہیں اور وہ ساری عمر کدالیں چلاتے چلاتے گزار دیتا ہے ‘کیوں؟ کیونکہ اس کا ہدف کوئی نہیں ہوتا۔ اس کی سوچ صرف وہ500روپے ہوتی ہے جس سے اس کا کچن چل جائے لیکن اگریہی مزدورتھوڑا سا وژن بڑا کر لے‘ ہدف کا تعین کر لے‘ وہ ارادہ کر لے میں اب محض بیلچہ نہیں چلاؤں گا بلکہ میں اب یہ کام ٹھیکے پرلوں گا‘ روزانہ گھنٹہ زیادہ کام کروں گاتو اس کی زندگی میں تبدیلی آنا شروع ہو جائے گی۔وہ ارادہ کر لے میں محض مزدور نہیں رہوں گا میں میسن ‘ کارپنٹر ‘ پلمبر اور الیکٹریشن کا کام بھی کروں گا‘ وہ روزانہ ایک ایک قدم آگے بڑھنا شروع کر دے تو یقین کیجئے ایک دن وہ انجینئربن جائے گا۔ اسی طرح زندگی کا ہر شعبہ ہے۔ آپ جس شعبے میں بھی ہیں آپ فیصلہ کر لیں ہم نے کولہو کے بیل بن کر کام نہیں کرتا‘ہم نے سیکھناہے‘ہم نے آگے بڑھنا ہے تو دنیا کی کوئی طاقت آپ کو کامیاب ہونے سے نہیں روک سکتی۔ اصل؂ میں جب انسان یہ سمجھ لے کہ بس یہی کام اس کی پہچان ہے‘ اب مزید مشقت نہیں کرنی تو سمجھ لیجئے آپ کی زندگی کی گاڑی کوبریک لگ جائے گی اور آپ مینڈکوں کی طرح ایک ہی تالاب کے باسی بن کر رہ جائیں گئے۔ کامیاب ہونا ہے توحوصلہ رکھنا ہوگا ، آگے بڑھنا ہو گا۔

گھر بیٹھے کی جانے والی 10 بہترین ملازمتیں، آپ بھی گھر بیٹھے نوکری کرسکتے ہیں

گھر بیٹھے کی جانے والی 10 بہترین ملازمتیں، آپ بھی گھر بیٹھے نوکری کرسکتے ہیں
ہفتہ‬‮ 14 جولائی‬‮ 2018 | 16:09
گزشتہ برسوں میں اقتصادی بحران کے نتیجے میں گھروں میں رہ کر کام کرنے والے افراد کی تعداد میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، اگرچہ پاکستان میں اس کا رجحان ابھی زیادہ نہیں تاہم یہاں بھی لوگوں کی جانب سے اس شعبے کا رخ کیا جارہا ہے۔اگر آپ جاننا چاہیں کہ گھر میں فری لانس رہ کر آپ کے سب سے زیادہ بہتر کیا ہوسکتا ہے تو ای لانس او ڈیسک نامی ایک ویب سائٹ جو دنیا بھر سے اپنے کاموں کے لیے فرنس لانس افراد کو بھرتی کرتی ہے، نے دس شعبوں کی ایک فہرست بنائی ہے جس

کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔وائس اوور وائس اوور آرٹسٹ عام طور پر ویڈیوز اور اشتہارات وغیرہ کے لیے استعمال ہوتے ہیں، جس کے لیے انہیں کسی مرکزی اسٹوڈیو کا بھی رخ کرنا پڑتا ہے مگر اب یہ کام کے اندر ہوم اسٹوڈیو میں بھی کیا جاسکتا ہے اور ساؤنڈ فائلیں ای میل یا انٹرنیٹ کے ذریعے ارسال کی جاسکتی ہیں۔انفوگرافک ڈیزائن پیچیدہ معلومات کو شیئرایبل طریقے سے پیش کرنے کی صلاحیت وائس اوور کے بعد فری لانس افراد کو بہت زیادہ کامیابی دلانے کا سبب بن سکتی ہے یعنی کسی بھی موضوع پر جامع گراف تیار کرنا انہیں راتوں رات کامیابی دلاسکتا ہے، صرف برطانیہ میں ہی اس کام کے لیے فی گھنٹہ 44 پاؤنڈز دیئے جاتے ہیں۔مالیاتی تحریریں فنانشل معاملات پر جامع تجزیوں یا مارکیٹ کے اشاریوں پر لکھا جاتا ہے، یہ کام کرنے والے کمپنیوں کے لیے بلاگ بھی لکھ کر پوسٹ کرسکتے ہیں یہاں تک کہ ان کی سالانہ رپورٹس کا کام بھی ان کی آمدنی بڑھاتا ہے۔کنٹریکٹ ڈرافٹنگ کنٹریکٹ ڈرافٹنگ ایک ایسا کام ہے جس کے لیے بہت زیادہ معاوضہ دیا جاتا ہے کیونکہ کسی بھی کاروباری معاہدے کو قانونی طور پر موزوں بنانے کے لیے اس صلاحیت کی ضرورت ہوتی ہے۔ریکروٹنگ متعدد کمپنیوں نے اب نئے عملے کی بھرتی کا پیچیدہ ٹاسک فری لانس افراد کو منتقل کردیا ہے، جو لوگوں کو متوجہ، منتخب اور بھرتی کرنے کا تمام کام کرتے ہیں۔مالیاتی پیشگوئی کاروبار ایسے فری لانسرز کو بہت زیادہ بھرتی کرتی ہیں جو کمپنی کے مالیاتی ٹرن اوور کی پیشگوئی مقررہ وقت کے اندر کرسکے، اس کام کے لیے کسی کمپنی کے اندرونی اکاؤنٹنگ اور سیلز ڈیٹا کا جائزہ لینا پڑتا ہے۔الیکٹرونک انجنئیرنگ الیکٹرونک پروگرامرز نئے سافٹ ویئرز اور آپ کے فونز، ٹیبلیٹس اور لیپ ٹاپس کے آپریٹنگ سسٹم کے لے آؤٹ پروگرام کرسکتے ہیں۔مترجم ٹرانسلیشن یا کسی بھی ایک سے دوسری زبان کی تحریروں کے ترجمے کی صلاحیت کی اس وقت کاروباری کمپنیوں کے اندر مانگ میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔سی وی رائٹنگ دنیا بھر میں ملازمت کی تلاش لوگ کرتے ہی ہیں اور اس کے لیے اپنی اچھی سی وی کی تیاری لازمی ہوتی ہے اور فری لانسرز اس کام کے ذریعے اچھی آمدنی کماسکتے ہیں۔پے پر کلک یہ ایک انٹرنیٹ ایڈورٹائزنگ ماڈل ہے جسے ویب سائٹ کی براہ راست ٹریفک کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، فری لانسر ایڈورٹائزر بن کر پیسہ بناسکتے ہیں جس کے لیے انہیں مختلف ویب سائٹس کو پے پر کلک ٹریفک فراہم کرنا ہوگا۔

آپ کامیاب تاجر کیسے بنیں گے؟

آپ کامیاب تاجر کیسے بنیں گے؟
جمعرات‬‮ 12 جولائی‬‮ 2018 | 17:30
ایک کامیاب کاروبار کرنے کے لیے آپ کو کاروبار کے گُر آنے چاہئیں۔ بزنس مین کے اندر چند ایسی خوبیوں کا ہونا ضروری ہوتا ہے جن کی بنا پر وہ مارکیٹ میں اپنا مقام حاصل کر لیتا ہے۔ لوگ اس پر اعتماد کرنے لگتے ہیں ا ور اسی کی بات کا یقین کرلیتے ہیں۔ کامیاب بزنس مین بننے کے لیے آپ کو انہی خوبیوں کو اپنے اندر لازمی طور پر لانا ہوگا۔ ایک مسلمان تاجر میں سب سے بڑی خوبی یہ ہونی چاہئے کہ وہ دیانت دار اور امانت دار ہوگا۔ وہ گاہک کے ساتھ دھوکا نہیں کرے گا۔ خراب

درست مال کے اندر چھپا کر فروخت نہیں کرے گا۔ کامیاب تاجر بننے کے لیے آپ میں پختہ حوصلہ ہونا چاہئے۔ حوصلہ ایک ایسی توانائی ہے جو انسان کو پہلے تو گرنے نہیں دیتی اور اگر گر بھی جائے، تو جلد سنبھلنے کی طاقت مہیا کرتی ہے۔ بازار میں رسک لینے والا حوصلہ مند تاجر ہمیشہ دوسروں پر بازی لیتا ہے۔ آپ کو کسٹمر کے ساتھ کام کرنے میں خوشی محسوس ہونی چاہئے۔ دن ہو یا رات کسی بھی وقت کام کے لیے تیار رہنے کو اپنا معمول بنانا پڑے گا۔کامیابی کی طرف قدم اٹھانے کے لیے آپ کو کسٹمر کے ساتھ بات کرنے کا سلیقہ آنا چاہئے۔ اس مقصد کے لیے یونیورسٹیوں میں باقاعدہ مارکیٹنگ کی ڈگریاں حاصل کی جاتی ہیں لیکن یہ کوئی ضروری نہیں۔ دنیا میں کئی ایسے کامیاب مارکیٹنگ آفیسرز ہیں جن کے پاس اس کام کی کوئی ڈگری نہیں۔ بس بات کرنے کا سلیقہ اور گاہک کو متاثر کرنے کا گر آنا چاہئے۔ یہ صفت بعض لوگوں میں فطری پائی جاتی ہے، لیکن اگر کسی میں فطری نہیں، تو اس طرح بننا کوئی زیادہ مشکل بھی نہیں، اور اس کا طریقہ یہ ہے کہ گاہک کی بات کو غور سے سننا، اس کے ڈیمانڈ کو اچھے طریقے سے سمجھنا، اس کے پسند و ناپسند کا خیال رکھنا، ہوسکتا ہے آپ کا آئیڈیا اس کی پسند سے اچھا ہو، مگر جب اس کا اصرار اپنی بات پر ہو، تو آپ کو بھی اس کے مطابق چلنا چاہئے۔ گاہک کا احترام اور اس کے ساتھ اخلاق سے پیش آنا بزنس میں انتہائی ضروری ہوتا ہے۔اپنی غلطیاں مت دہرائیں۔ ایک بار کوئی غلطی ہوجائے، تو اس سے سبق سیکھ لیں۔ کسی غلطی کی وجہ سے سب کچھ داؤ پر لگ جائے، تب بھی ہمت مت ہاریں۔ دوبارہ نئے سرے سے شروع کرنے کا ارادہ کیجئے۔ اللہ تعالیٰ کی ذات پر کامل بھروسا رکھئے اور اپنے کاروبار کو ایسے خطوط پر استوار کیجئے کہ سابقہ غلطیاں دوبارہ نہ آجائیں اور مزید خطرات کو بھی ازحد کم کیا جاسکے۔ بزنس میں اپنی غلطی ماننا معیوب بات نہیں۔ ہوسکتا ہے وقتی طور پر گاہک آپ سے روٹھ کر چلا جائے، لیکن جب آپ اپنی کوتاہی کا اعتراف کرلیتے ہیں، تو یہ بات گاہک کو سوچنے پر مجبور کردے گی۔ وہ ضرور لوٹ کر آئے گا اور آپ سے دوبارہ کام کی درخواست کرے گا۔ اسے کہتے ہیں صبح کا بھولا شام کو گھر آئے، تو اسے بھولا نہیں کہتے۔ یاد رہے گاہک بادشاہ ہوتا ہے۔ اس کے سامنے سر جھکانے میں تاجر کو سبکی محسوس نہیں ہونی چاہئے۔کاروبار میں وقت کی اہمیت دیگر شعبوں کی طرح مسلّم ہے۔ بے فائدہ باتوں میں وقت ضائع مت کیجئے۔ کوئی گاہک اگر بیٹھ کے الف لیلیٰ کی کہانی یا اپنے گھر کے مسائل سنانا شروع کرے، تو آپ اس کو ہوں ہاں میں جواب دے سکتے ہیں، لیکن اس کی بات میں بات نکالنے سے اسے مزید حوصلہ ملے گا اور یوں اس کی کہانیاں آپ کا ڈھیر سارا وقت برباد کر دیں گی۔ آپ اس کا دکھڑا سننے کے ساتھ ساتھ دوسرے گاہک کا کام کرکے رخصت کرسکتے ہیں۔ایک وقت میں کئی کام کرنے کی عادت ڈالیں۔ اگر آپ کمپیوٹر پر ہیں اور اس دوران میں کال آجائے، تو موبائل کان کے ساتھ لگا کر بات کریں لیکن ساتھ ساتھ کمپیوٹر پر کام بھی کرتے رہیں، اس دوران میں آفس میں کوئی داخل ہوجائے، تو اس کو احترام کے ساتھ بیٹھنے کا بھی کہہ دیں۔ایک کمپنی کے سہارے مت بیٹھیں۔ دنیا میں کوئی بھی مکمل نہیں۔ کمپنیوں میں بھی اتار چڑھاؤ آتے ہیں۔ کسی بھی غیرتسلی بخش صورتحال میں آپ کے پاس متبادل کوئی ایسا ذریعہ ہونا چاہئے، جو آپ کا ڈیمانڈ پورا کرسکے۔ آپ مارکیٹنگ خود بھی کرسکتے ہیں، سوشل میڈیا کے ذریعے بھی اور اخبارات وغیرہ کے ذریعے بھی۔ کسی دانا کا قول ہے کہ دس میں سے اگر ایک روپیہ پروڈکشن پر لگایا جائے، تو چاہئے کہ باقی نو روپے اس پروڈکٹ کی تشہیر پر لگا دئیے جائیں۔ کیوں کہ تشہیر ہی پیداوار کی بِکری کا واحد ذریعہ ہے۔ اگر آپ کے پراڈکٹس کا لوگوں کو پتا ہی نہیں، تو ان کی فروختگی کیسے ہوگی؟جیسا کہ شروع میں کہا گیا ہے کہ ایمانداری اور دیانت ہی ایسی صفات ہیں جو آپ کو مارکیٹ میں مقبولیت سے نواز سکتی ہیں۔ اس کے ساتھ ایک اور چیز بھی ضروری ہے اور وہ یہ کہ پنج وقت نماز، حقوق العباد کی ادائیگی اور زکوٰۃ و عشر کی ادائیگی بروقت کی جائے۔ یقینا ایک مسلمان کے لیے صرف دنیاوی نفع اہم نہیں بلکہ اس کے نزدیک آخرت کی کمائی اس دنیا کے نفع سے زیادہ اہم ہے۔

ایک کیلا ، ایک گلاس پانی اور تھوڑی سی دار چینی ۔۔ ایسا باکمال نسخہ کہ آپ کی زندگی آسان ہو جائے گی

ایک کیلا ، ایک گلاس پانی اور تھوڑی سی دار چینی ۔۔ ایسا باکمال نسخہ کہ آپ کی زندگی آسان ہو جائے گی
منگل‬‮ 24 جولائی‬‮ 2018 | 17:46
سلسل بے خوابی کا شکار رہنے والے افراد نیند کیلئے خواب آور ادویات کا استعمال کرنے لگ جاتے ہیں جس کے سائیڈ ایفیکٹس کی وجہ سے وہ مزید پیچیدگیوں کا شکار ہو جاتے ہیں. بے خوابی کی وجہ سے جسم خطرناک بیماریوں میں مبتلا ہونےلگتا ہے اور کمزوری بھی پیدا ہو جاتی ہے. لیکن اب ماہرین صحت نے بے خوابی کا شکار افراد کیلئے ایسا گھریلو ٹوٹکا دریافت کر لیا ہے جس کے استعمال سے بے خوابی کا شکار افراد نہ صرف بھرپور اور مزیدار نیند کا لطف لے سکتے ہیں بلکہ اس کے استعمال سے وہخواب آور ادویات کے

ایفیکٹس سے بھی نجات حاصل کر سکتے ہیں. ماہرین صحت کاکہنا ہے کہ ایسی مشکل کے لئے کیلوں والی چائے کا استعمال کریں.اس کے کوئی سائیڈ افیکٹس بھی نہیں اور اس کے استعمال سے آپ کوپرسکون نیند بھی آنے لگی گی.کیلوں میں پوٹاشیم اور میگنیشیم کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے اور ان دونوں دھاتوں کی وجہ سے ہمیں پرسکون نیند آنے لگتی ہے.ان کی وجہ سے ہمارے پٹھے بھی مضبوط ہوتے ہیں اور ان میں اکڑاؤ اور کھچاؤبھی نہیں ہوتا.کیلے کی چائے کیلئے آپ کو دستیاب اجزاءدرج ذیل ہیں. ایک کپ چائے بنانے کیلئے.ایک کیلا، ایک گلاس پانی، دو گرام دار چینی درکار ہو گی.کیلے کو کاٹ کر پانی میں ڈالیں اور دس منٹ تک پانی کوابالیں،مشروب کو چھان لیں.اب اس پردارچینی چھڑک دیں اور رات کوسونے سے ایک گھنٹہ پہلے کیلے والی چائے نوش فرمائیں.اس مشروب کوروزانہ استعمال کرنے سے آپکو رات کوپرسکون نیند آئے گی.