محکمہ موسمیات نے کراچی میں ہیٹ ویووارننگ جاری کردی

محکمہ موسمیات نے کراچی میں ہیٹ ویووارننگ جاری کردی
بدھ‬‮ 25 اپریل‬‮ 2018 | 9:31
محکمہ موسمیات نے کراچی میں ہیٹ ویووارننگ جاری کرتے ہوئے شہریوں کو محتاط رہنے کی ہدایت کی ہے ۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں آئندہ تین روز گرمی کی لہر جاری رہنے کا امکان ہے، اور درجہ حرارت چالیس ڈگری سینٹی تک پہنچنے کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات نے کراچی میں ہیٹ ویو وارننگ جاری کردی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق منگل کو شہر کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت39 ڈگری سینٹی گریڈ تک رہا جبکہ ہوا میں نمی کا تناسب 18 فیصد ریکارڈ کیا گیا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ تین روز تک کراچی میں موسم خشک اور گرم رہنے کا

ہے۔

کیلا، گلاس پانی اور دو گرام دار جینی اور آپ کا بہت بڑا مسئلہ

کیلا، گلاس پانی اور دو گرام دار جینی اور آپ کا بہت بڑا مسئلہ

مسلسل بے خوابی کا شکار رہنے والے افراد نیند کیلئے خواب آور ادویات کا استعمال کرنے لگ جاتے ہیں جس کے سائیڈ ایفیکٹس کی وجہ سے وہ مزید پیچیدگیوں کا شکار ہو جاتے ہیں. بے خوابی کی وجہ سے جسم خطرناک بیماریوں میں مبتلا ہونےلگتا ہے اور کمزوری بھی پیدا ہو جاتی ہے.

لیکن اب ماہرین صحت نے بے خوابی کا شکار افراد کیلئے ایسا گھریلو ٹوٹکا دریافت کر لیا ہے جس کے استعمال سے بے خوابی کا شکار افراد نہ صرف بھرپور اور مزیدار نیند کا لطف لے سکتے ہیں بلکہ اس کے استعمال سے وہخواب آور ادویات کے سائیڈ ایفیکٹس سے بھی نجات حاصل کر سکتے ہیں. ماہرین صحت کاکہنا ہے کہ ایسی مشکل کے لئے کیلوں والی چائے کا

استعمال کریں.اس کے کوئی سائیڈ افیکٹس بھی نہیں اور اس کے استعمال سے آپ کوپرسکون نیند بھی آنے لگی گی.کیلوں میں پوٹاشیم اور میگنیشیم کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے اور ان دونوں دھاتوں کی وجہ سے ہمیں پرسکون نیند آنے لگتی ہے.ان کی وجہ سے ہمارے پٹھے بھی مضبوط ہوتے ہیں اور ان میں اکڑاؤ اور کھچاؤبھی نہیں ہوتا.کیلے کی چائے کیلئے آپ کو دستیاب اجزاءدرج ذیل ہیں. ایک کپ چائے بنانے کیلئے.ایک کیلا، ایک گلاس پانی، دو گرام دار

پیٹ کی چربی اور دردوں سے چھٹکارہ ادرک کو اس طریقے سے استعمال کریں

پیٹ کی چربی اور دردوں سے چھٹکارہ ادرک کو اس طریقے سے استعمال کریں

دوائی چھوڑئے ادرک کا استعمال کریں اور بیماریاں بھگائےدوائی چھوڑئے ادرک کا استعمال کریں اور بیماریاں بھگائےدوائی چھوڑئے ادرک کا استعمال کریں اور بیماریاں بھگائے ادرک ایک خوشبودار جڑ کہلاتی ہے اس کا استعمال کھانوںمیں کثرت سے ہوتا ہے اس سے کھانوں میں ذائقہ اور خوشبو آتی ہے لیکن اس کے ساتھ اس میں ایسی جادوائی اوصاف ہیں جس کا جان کوئی بھی اس کا استعمال ترک نہیں کرے گا ۔ اگر آپ موٹاپے اور جوڑوں کے درد سے پریشان ہیں تو ’ادرک کا پانی‘ وہ مفید نسخہ ہے جو آپ کو ہر صورت آزمانا چاہئیے،

کیونکہ ان مسائل کے حل کے لئے شاید ہی اس سے بہتر کوئی اور چیز ہو۔ ویب سائٹ ’کنسیڈر ہیلتھ‘ کے مطابق ادرک کا پانی خون میں لوتھڑے نہیں بننے دیتا اور یوں خون کے بہاﺅ کو متوازن کرتا ہے۔ یہ کولیسٹرول کے لیول میں کمی کرتا ہے اور جوڑوں کے درد، سوزش اور سوجن سے نجات دلتا ہے۔ یہ نسخہ ایک طاقتور اینٹی آکسیڈنٹ بھی ہے جو آپ کے جسم کی صفائی کرتا ہے اور کئی طرح کی بیماریوں، حتیٰ کہ کینسر جیسی بیماری کے خلاف بھی مدافعت پیدا کرتا ہے۔اسے تیار کرنے کیلئے پہلے ڈیڑھ لٹر پانی کو ابال لیں اور جب یہ ابلنا شروع ہوجائے تو اس میںادرک کے چھوٹے چھوٹے ٹکڑے کاٹ کر ڈالیں۔

اسے کچھ دیر کیلئے ابلنے دیں اور پھر چولہے سے اتار کر اسے تقریباً 15 منٹ کیلئے پڑا رہنے دیں۔ جب یہ ٹھنڈا ہوجائے تو اس میں لیموں کا رس ملا لیں۔

بہترین نتائج کے لئے دن میں دو بار یہ مشروب پئیں۔ اس کا استعمال صبح کے وقت ناشتے سے پہلے اور رات کے کھانے سے پہلے کریں۔ یہ جہاں موٹاپے اور جوڑوں کے درد کا خاتمہ کرتا ہے وہیں ہمارے مدافعتی نظام کو طاقتور بناتا ہے، نزلہ و زکام سے بچاتا ہے، دوران خون کو متوازن کرتا ہے۔ اسی طرح یہ ہاضمے کو درست کرتا ہے اور خوراک کے اجزاءکو ہمارے جسم میں جذب ہونے میں بھی مدد دیتا ہے

اس کا کچھ ہفتوں تک مسلسل استعمال رکھیں یہ جسم سے زائد چربی کو نکالتا ہے اس کے ساتھ زائد مادوں کو بھی خارج کرتا ہے جسم کو زہرلے مادوں سے محفوظ رکھتا ہے اور انسان کو صحت مند بناتا ہے ۔ اس لئے اپنی اچھی صحت کے لئے اس کا استعمال اپنے روز مرہ خوراک میں رکھیں

گندے انڈوں کا ایسا فائدہ جو آپ نے کبھی نہ سوچا ہوگا

گندے انڈوں کا ایسا فائدہ جو آپ نے کبھی نہ سوچا ہوگا
منگل‬‮ 24 اپریل‬‮ 2018 | 20:35
گندے انڈے ایسی چیزجس کو ہم گندگی سمجھ کے پھینک دیتے ہیں لیکن اب ہم آپ کو اس کا ایسا فائدہ بتائیں گے جس کو سن کر آپ ناچاہتے ہوئے بھی استعمال کرنے پر مجبور ہو جائیں گے۔سائنسدانوں نے اپنی ایک نئی تحقیق میں بتایا ہے کہ انڈوں کی بدبو جس کو ہم سونگنا تک گوارا نہیں کرتے اس سے خارج ہونے والی گیس ہائیڈروجن سلفائےٖڈکی وجہ سے ہوتی ہے جو شوگرکے مریضوں کو ہارٹ اٹیک سے محفوظ رکھتی ہے۔ ماہرین کا کہنا تھا کہ ہائی بلڈ شوگر کے باعث خون کی وریدوں میں انفلیمیشن پیدا ہو جاتی ہےجو خون

پیدا ہو جاتی ہےجو خون کی روانی میں رکاوٹ بن کر شوگر کے مریض کو ہارٹ اٹیک آنے کے امکانات بڑھا دیتی ہے۔ہائیڈروجن سلفائیڈ گیس وریددوں کے خلیوں کو پہنچنے والے نقصان کو درست کرتی ہے۔ماہرین کا کہنا تھا کہ اگر کسی مریض کے متاثرہ خلیوں میں ایسی دوائی انجکشن کے ذریعے دی جائے جس سے سڑے ہوئے انڈوں کی بدبو آتی ہو ،وہ انفلیمیشن کے باعث تباہ ہونیوالے خلیوں کوصحت مندکر دیگی۔

کینسر سے بچائو کا حیرت انگیز علاج ۔۔۔ بس بادام اس طریقے سے کھائیں

کینسر سے بچائو کا حیرت انگیز علاج ۔۔۔ بس بادام اس طریقے سے کھائیں
منگل‬‮ 24 اپریل‬‮ 2018 | 20:41
بادام کھانے کے فوائد سے تو کسی کو بھی انکار نہیں لیکن بادام کھانے کا درست طریقہ کیا ہے۔کیا بادام ایسے ہی کھالیئے جائیں یا پھر انہیں بھگو کر کھانے کا زیادہ فائدہ ہے؟یہ وہ سوالات ہیں جو بادام کھاتے ہوئے اکثر ہمارے ذہن میں آجاتے ہیں۔ بادام کے گرد پیلی جھلی کی وجہ سے tanninہوتا ہے جس کی وجہ سے بادام کی غذائیت سے بھرپور فائدہ نہیں اٹھایا جاسکتا لیکن اگر اس چھلکے کو بھگو کر اتار لیا جائے تو بادام میں غذائیت زیادہ آجاتی ہے اور ساتھ ہی یہ ہاضمے کے بہتر بنا تا ہے۔چھیلے ہوئے بادام میں

انزائم ہوتا ہے جس کی وجہ سے چکنائی کو ہضم کرنے میں بھی مدد ملتی ہے۔بھگوئے ہوئے بادام، انسان کے وزن کو کم کرنے میں بھی اہم کردار ادا کرتا ہے۔اس میں موجود غذائیت کی وجہ سے ہماری بھوک کم ہوتی ہے اور نتیجہ کے طور پر ہم کم کھانا کھاتے ہیں۔بھگوئے ہوئے بادام میں انٹی آکسیڈنٹ کی بھاری مقدار موجود ہوتی ہے جبکہ اس کے استعمال سے جلد تروتازہ رہتی ہے۔بھگوئے ہوئے بادام میں وٹامن بی 17اور فولک ایسڈ ہوتا ہے جو کینسر سے لڑنے میں مددگار ہوتا ہے۔بھگوئے ہوئے بادام حاملہ خواتین کے لئے بھی بہت مفید ہوتا ہے

نہاتے وقت ایک ایسا کام جس سے

نہاتے وقت ایک ایسا کام جس سے

جلد ڈاکٹر کرسٹی کڈ نے حیرت انگیز انکشاف کیا ہے کہ کمر پر نکلنے والے دانوں کی ایک اہم وجہ ہمارے نہانے کا انداز بھی ہے. دی انڈیپینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق م ڈاکٹر کرسٹی کا کہنا ہے کہ کمر پر دانے بنیادی طور پر کچھ ایسے ہارمونز کی وجہ سے نکلتے ہوتے ہیں جن کے باعث بالوں کی جڑوں میں موجود گلینڈ زیادہ چکنائی پیدا کرنے لگتے ہیں.

جسم کا وہ حصہ جہاں پر بال نکل آئیں تو یہ انتہائی سنگین بیماری کی علامت ہوتے ہیں ان گلینڈز سے چکنائی کے زیادہ اخراج کی وجہ سے جلد پر دانے اور پھنسیاں بننے لگتی ہیں. این ایچ ایس کے مطابق 50 فیصد خواتین اور 40 فیصد مردوں میں مردوں میں فیصد مردوں میں زیادہ 20 کی دہائی میں ایسا ہوتا ہے.ڈاکٹر کرسٹی کہتی ہیں کہ ہم میں سے اکثر لوگ نہاتے ہوئے جب سر پر شمپو یا کنڈیشنر لگاتے ہیں

تو بالوں کو اچھی طرح پانی سے دھوئے بغیر ا باقی جسم کو بھی دھونا شروع کردیتے ہیں. خصوصاً کنڈیشنر ایسی حالت میں ہمارے بالوں سے بہتا ہوا باقی جلد پر بھی چلا جاتا ہے اور اس پر ایک چکنی تہہ بنادیتا ہے، جو بعدازاں دانوں اور پھنسیوں کا سبب بنتی ہے. انہوں نے اس مسئلے کا سادپہ حل بتاتے ہوئے کہا کہ سر کے بالوں کو پہلے اچھی طرح دھولیا جائے اور انہیں پانی سے اچھی طرح صاف کرنے کے بعد ہی باقی جسم کو دھویا جائے. اس آسان احتیاط سے آپ کمر پر نکلنے والے دانوں سے بچ سکتے ہیں

ورزش کے دماغی فوائد اگلی نسل میں بھی منتقل ہوتے ہیں، تحقیق

ورزش کے دماغی فوائد اگلی نسل میں بھی منتقل ہوتے ہیں، تحقیق
بدھ‬‮ 18 اپریل‬‮ 2018 | 12:27
ایک دلچسپ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ ورزش ایک جانب تو ہمارے لیے بہت سے فوائد رکھتی ہے لیکن دوسری جانب ورزش کے فوائد اگلی نسل میں بھی منتقل ہوتے ہیں۔ چوہوں پر کی گئی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ ان کے بچوں کے ڈی این اے کو تبدیل نہ کرتے ہوئے بھی ورزش کے فوائد ان میں منتقل ہوئے اور بہتری کی وجہ بنے تاہم انسانوں پر ایسے ہی اثرات کا جائزہ لینے کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ باقاعدہ ورزش 50 سال کی عمر کے بعد بھی دماغ کو تازہ اور

کو تازہ اور بہتر حالت میں رکھتی ہے۔ جوانی اور ادھیڑ عمری میں دماغی معمے حل کرنے اور ذہنی مقابلوں میں حصہ لینے سے ڈیمینشیا اور دیگر دماغی امراض کو ٹالا جاسکتا ہے۔

جرمن سینٹر فار نیورو ڈی جنریٹیوو ڈیزیز (ڈی زید این ای) کے ماہرین نے چوہوں کو ایک متحرک میدان میں رکھا جہاں انہوں نے خوب ورزش کی تو اس کے فوائد ان کے بچوں تک بھی منتقل ہوئے۔ ماہرین نے دریافت کیا کہ ورزش کرنے والے چوہوں کے بچوں نے سیکھنے اور اکتساب کے عمل میں بھی دیگر کے مقابلے میں بہترین کارکردگی دکھائی۔ چوہوں کے بچوں کے دماغی خلیات کے باہمی روابط بھی مضبوط دیکھے گئے جسے طب کی زبان میں ’سائنیپٹک پلاسٹیسٹی‘ کہتے ہیں۔ یہ عمل جس دماغی حصے میں ہوتا ہے اسے ہپوکیمپس کہتے ہیں جو سیکھنے اور سمجھنے کی صلاحیت کا اہم مرکز بھی ہے۔

اس سے قبل ماہرین کہتے رہے ہیں کہ والدین کا ذہنی تناؤ اور صدمہ بھی اولاد تک منتقل ہوتا ہے اور یہ عمل ایپی جنیٹک وراثت کہلاتا ہے۔ ایک اور مثال یہ ہے کہ اگر والدین ناقص غذا کھاتے ہیں تو اس کے منفی اثرات اگلی نسل تک بھی منتقل ہوسکتے ہیں لیکن اس عمل میں ڈی این اے تبدیل نہیں ہوتا بلکہ فوائد یا نقصانات والدین کے آراین اے سے اولاد تک پہنچتے ہیں۔ ماہرین نے اس تحقیق کو ایک اہم قدم قرار دیا ہے۔ اگر یہ بات ثابت ہوجاتی ہے تو اس سے ایک اور سائنسی تصور ’فلائن ایفیکٹ‘ کی تصدیق ہوسکتی ہے۔ فلائن ایفیکٹ کے تحت ترقی یافتہ ممالک میں رہنے والے افراد کی ہر نسل کا آئی کیو دوسری نسل سے زیادہ نوٹ کیا گیا ہے اور یہ سلسلہ کئی عشروں سے جاری ہے۔ یعنی ذہین والدین کے بچے بھی بتدریج ذہین پیدا ہوتے ہیں۔ وجہ کچھ بھی ہو، ہم آئے دن ورزش کے فوائد سے آگاہ ہوتے رہتے ہیں اور اب ورزش کی عادت خود آنے والی نسلوں کےلیے بھی مفید ثابت ہوسکتی ہے۔ اسی لیے ماہرین نے ورزش سے بھرپور سرگرم زندگی پر زور دیا ہے۔

اگر آپ جوڑوں کے درد میں مبتلاہیں تو ہلدی کی چائے بنا کر پی لیں اور

اگر آپ جوڑوں کے درد میں مبتلاہیں تو ہلدی کی چائے بنا کر پی لیں اور

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)برصغیراور ایشیا میں عام استعمال ہونے والی ہلدی کے فوائد ہر روز سامنے آرہے ہیں اور اب کئی تحقیقات سے اسے جادوئی شے قرار دیا جاچکا ہے۔ مصدقہ معلومات اور تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ ہلدی اپنے اندر انقلابی طبی خواص رکھتی ہے۔ تو پہلے ہلدی کی چائے کےفوائد پڑھئے اور اس کے بعد چائے تیار کرنے کی ترکیب جانتے ہیں۔

جوڑوں اور گٹھیا کے درد میں مفید 2017 میں کی گئی تحقیق سے معلوم ہوا کہ امریکہ میں جوڑوں اور گٹھیا کے درد سے متاثرہ افراد ہلدی کی چائے پیتے ہیں اور اس سے انہیں افاقہ ہے۔ ہلدی میں موجود کئی اہم کیمیکل ہڈیوں کے درد اور جوڑوں کی سوزش کم کرتے ہیں۔

جسم کے دفاعی نظام کی بہتریہلدی میں موجود سرکیومن میں اینٹی وائرل، اینٹی انفلیمٹری اور اور اینٹی آکسیڈنٹس خواص موجود ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ بیکٹیریا کو ختم کرنے کی زبردست صلاحیت رکھتی ہے۔

یہ امنیاتی نظام کو درست رکھتی ہے اور کینسر سمیت کئی بیماریوں کو آپ سے دور رکھتی ہے۔دل کے امراض کو دور رکھےہم جانتے ہیں کہ سرکیومن نامی کیمیکل ہلدی میں عام پایا جاتا ہے اور بہت سے خواص رکھتا ہے۔ یہ ایک جانب تو اندرونی سوزش و جلن کو کم کرتا ہے تو دوسری جانب اس میں اینٹی آکسیڈنٹس موجود ہوتے ہیں۔

اس ضمن میں 2012 میں ایک سروے کیا گیا اور دل کے مریضوں کو بائی پاس سے قبل تین دن قبل اور پانچ دن بعد روزانہ چار گرام سرکیومن دیا گیا تو اس سے دل کے دورے کے خطرات 17 فیصد تک کم دیکھے گئ

ہوشیار خبردار!ایموکسل اورآگمنٹین استعمال نہ کریں محکمہ صحت کی جانب سے پاکستانیوں کیلئے اہم اعلامیہ جاری

ہوشیار خبردار!ایموکسل اورآگمنٹین استعمال نہ کریں محکمہ صحت کی جانب سے پاکستانیوں کیلئے اہم اعلامیہ جاری
پیر‬‮ 16 اپریل‬‮ 2018 | 13:38
معروف سیرپ اموکسل اور آگمنٹن غیر معیاری قرار۔محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے ملٹی نیشنل کمپنی گلیکسو سمتھ کلائن( جی ایس کے ) سے بچوں میں انفیکشن سے ہونے والی بیماریوں کے لئے استعمال ہونے والے معروف اینٹی بائیو ٹیک سیرپ آگمنٹن ڈی ایس اور اموکسل سسپنشن کی خریداری کے لئے ٹینڈرز کئے گئے ،معمول کے مطابق نمونہ جات سرکاری میڈیکل سٹور ڈپو سندر اسٹیٹ سے حاصل کئے گئےجن کو ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹری سے چیک کرایا گیا جس نے سیرپ کو سب سٹینڈرڈ قرار دے دیا ۔اس کے بعدبیچ کی تمام ادویات (سیرپ) فوری روکنے کے احکامات جاری کر دئیے

جاری کر دئیے گئے ۔ دوسری جانب ملٹی نیشنل کمپنی کی جانب سے اس بیچ کے لاکھوں سیرپ کہاں کہاں پرائیویٹ سطح پر مارکیٹ کئے گئے تا حال علم سے باہر ہیں اب ڈی ٹی ایل اور پراونشل ڈرگ کنٹرول ونگ کی جانب سے ان ادویات کی تعداد اور پھیلائو کے حوالے سے معلومات لے کر مارکیٹ میں الرٹ جاری کیا جائے گا

اور تمام ادویات کو واپس منگوایا جائے گا مگر ابھی تک صرف سرکاری سطح پر خریدی جانے والی ادویات کے بارے الرٹ جاری کیا گیا ہے جبکہ نجی مارکیٹ کے میڈیکل سٹوروں پر کون سا بیچ بک رہا ہے معلومات حاصل کرنا ضروری ہے ۔اس لئے والدین کوہوشیاررہنا چاہیے ۔ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹریپنجاب کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شفیق نے بتایاہمارا فرض ہے کہ ہم تمام ادویات کی ٹیسٹنگ کے قانونی تقاضے پورے کریں، وہ ذمہ داری ہم نے پوری کردی ہوسکتا ہے کمپنی کے چیلنج کرنے پر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اسے معیاری قرار دیدے ، ہم اس پر کچھ نہیں کہہ سکتے ۔ ایڈیشنل سیکرٹری ڈرگ کنٹرول پنجاب ڈاکٹر سہیل احمد نے کہاکہ یہ نمونے چیک کرنا ہمارا معمول کا کام ہے ناقص ادویات والوں کو معاف نہیں کیا جائے گا اور ان کے خلاف مکمل قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

ماہر فارما سسٹ قانون دان نور مہر نے کہا کہ سب سٹینڈرڈ ادویات کا مطلب ہے کہ دوا مطلوبہ نتائج نہیں دے گی اس کے سائیڈ افیکٹ بھی ہوسکتے ہیں ۔ ترمیمی ایکٹ2017کے مطابق اس کی سزا 3کروڑ جرمانہ ،تین سال قید ہے اور یہ ناقابل ضمانت جرم ہے۔

کونسی چیزیں کھانے سے زندگی طویل ہوتی ہے؟امریکی ماہرین صحت کا حیران کن انکشاف

کونسی چیزیں کھانے سے زندگی طویل ہوتی ہے؟امریکی ماہرین صحت کا حیران کن انکشاف
پیر‬‮ 16 اپریل‬‮ 2018 | 1:34
پنیر خواہ شیڈر ہو، برائی ہو یا پرمیسن، یہ جگر کو توانا رکھتے ہوئے اس کے سرطان سے بچاتا ہے۔ پنیر میں موجود ایک مرکب، اسپرمیڈائن جگر کے متاثرہ خلیات کو بڑھنے سے روکتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ جگر فائبروسِس، ہیپٹوسیلولرکارسینوما (ایچ سی سی ) کو روکتا ہے جو جگر کے کینسر کی سب سے عام وجہ بھی ہے۔ پاکستان سمیت دنیا بھر میں جگر کا کینسر ہرسال ہزاروں لاکھوں افراد کی جان لے رہا ہے۔ٹیکساس اے اینڈ ایم یونیورسٹی کے ماہرین نے چوہوں کو اسپرمیڈائن کھلایا تو حیرت انگیز طور پر ان کی عمر میں 25 فیصد اضافہ

right;”>25 فیصد اضافہ نوٹ کیا گیا۔ اگر چوہوں کی طرح یہ انسانوں کی زندگی میں اضافہ کرسکے تو انسان کے 100 برس تک زندہ رہنے کی امید پیدا ہوجائے گی تاہم اسپرمیڈائن کے سپلیمنٹ بنانے میں مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔ ماہرین نے مزید انکشاف کیا کہ باقاعدگی سے مشروم، سویا، دالیں، مکئی اور مکمل اناج (ہول گرین) کھانے سے بھی زندگی طویل ہوتی ہے۔غذائی ماہرین کا اصرار ہے کہ تین اشیا زندگی کو طوالت دے سکتی ہیں، اول کیلوریز کو جسم میں تلف کرنا، دوم گوشت اور دیگر پروٹین میں موجود میتھیونائن امائنو ایسڈ سے گریز اور ریپامائسن جیسی ایک دوا جانداروں کی زندگی بڑھانے میں معاون ثابت ہوئی ہے۔